امتحانات کا فارمولا طے کر لیا گیا

بورڈز کی جانب سے تیار کی گئی سفارشات کے مطابق

نہم جماعت کو دہم میں پروموٹ کر دیا جائے گا. ان سے صرف دہم کے پیپر لیے جائیں گے، اور دہم کے حاصل کردہ نمبرز کے مطابق نہم کے بھی نمبرز دیے جائیں گے.

دہم کے طلباء امتحان دے چکے، ان کے پیپرز جلد از جلد مارک کیے جائیں گے. اگر کسی بنیاد پہ مارکنگ شروع نا ہو سکی تو نہم کے حاصل کردہ نمبرز کی بنیاد پہ دہم کے نمبرز بھی دیے جائیں گے.

دہم کے موجودہ طلباء کے لیے پریکٹیکل کا امتحان نہیں لیا جائیگا. پریکٹیکل کے کل نمبرز کا نصف تمام طلباء کو بلا تفریق دے دیا جائے گا، جبکہ بقیہ نصف متعلقہ مضمون کی پرسنٹیج کے حساب سے دیا جائے گا.

تمام فرسٹ ائیر کے موجودہ طلباء کو سیکنڈ ائیر میں پروموٹ کیا جائیگا، اور صرف سیکنڈ ائیر کے امتحان لیے جائینگے، سیکنڈ ائیر امتحان کے نمبرز کے مطابق فرسٹ ایئر کء نمبرز بھی فائنل رزلٹ میں شامل کیے جائینگے..

سیکنڈ ائیر کے موجودہ طلباء کا امتحان بھی نہیں لیا جائیگا، بلکہ انہیں بھی فرسٹ ائیر کی حاصل کردہ پرسنٹیج کے مطابق نمبرز دیکر یونیورسٹی داخلے کے لیے اہل سمجھا جائے گا.. (پریکٹیکل امتحان کا شیڈول دہم کی طرح ہوگا)

رپیٹ اور امپروومنٹ والے طلباء کے لیے امتحان لیا جائیگا، جس کے شیڈول کا اعلان بعد میں کیا جائیگا.

یونیورسٹیز اپنا طریقہ کار خود طے کرینگی